Home / Uncategorized / انسٹاگرام پر ’فحش‘ تصویر:توانائی کمپنی کی خاتون ملازمت سے فارغ ،عدالت نے بحال کردیا
انسٹاگرام پر ’فحش‘ تصویر:توانائی کمپنی کی خاتون ملازمت سے فارغ ،عدالت نے بحال کردیا

انسٹاگرام پر ’فحش‘ تصویر:توانائی کمپنی کی خاتون ملازمت سے فارغ ،عدالت نے بحال کردیا

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک)امریکی شہر نیویارک میں توانائی کی ایک معروف کمپنی نے ایک خاتون کی ’فحش‘تصویر منظر عام پر آنے کے باعث انہیں ملازمت سے فار غ کر دیا ۔کمپنی کے اس فیصلے کے خلاف مذکورہ خاتون نے عدالت کا در کھڑکایا تو عدالت نے اسے ملازمت پر بحال کردیا۔
برطانوی اخبار انڈیپنڈنٹ کے مطابق کون ایڈیسن کمپنی نے 26سالہ سمانتھا کرشلا نامی ایک خاتون کی سماجی رابطے کی ویب سائٹ انسٹا گرام پر موجود ایک تصویر جس میں وہ ایک دوسری خاتون کے جسم کے ایک حصے کا بوسہ لے رہی ہیں دیکھنے کے بعد انہیں 70ہزار ڈالر (73لاکھ روپے سے زائد)سالانہ آمدن والی پرکشش ملازمت پر رکھنے سے انکار کردیا۔

کمپنی کے اس فیصلے کے خلاف 26سالہ سمانتھا عدالت جا پہنچیں ۔ان کے وکیل کی جانب سے میڈیا کوبتایا گیا کہ سمانتھا کو ملازمت سے انکار اس لئے کیا گیا کہ تصویر پر انہیں ایک کمنٹ میں ہم جنس پرست کہا گیا تھا۔سمانتھا کے وکیل کا کہنا تھا کہ تصویر ’بہت زیادہ فحش‘نہیں ہے اس سے زیادہ فحش تصاویرسپورٹس میگزینز میں شائع ہوتی رہتی ہیں۔
مذکوہ تصویر تین سال قبل ایک آرٹ نمائش کیلئے بنائی گئی تھی جس میں سمانتھا کی شکل بھی واضح نہیں ہے۔
عدالت میں سماعت کے دوران سمانتھا نے کہا کہ میری یہ تصویر ’فحش‘ کے ذمرے میں نہیں آتی بلکہ یہ آرٹ ہے جس کی ایک گیلری میں نمائش کی گئی تھی۔انہوں نے کاہ کمپنی اس لئے مجھے ملازمت سے ہٹا رہی ہے کیونکہ وہ مجھے ہم جنس پرست خیال کررہی ہے۔عدالت نے فریقین کا موقف سننے کے بعد سمانتھا کے حق میں فیصلہ دیتے ہوئے انہیں ملازمت پر بحال کرنے کا حکم دیدیا۔
دوسری جانب کمپنی کا کہنا ہے کہ’ کون ایڈیسن‘ نے اپنے فیصلے پر نظر ثانی کرنے کے بعد سمانتھا کو ملازمت پر بحال کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے۔

Comments are closed.

Scroll To Top