Home / Uncategorized / بھارت ایٹمی ہتھیاروں پر جتنی بھی سرمایہ کاری کرلے ،پاکستانی میزائلوں سے بچ نہیں سکتا: روسی جوہری ماہر
بھارت ایٹمی ہتھیاروں پر جتنی بھی سرمایہ کاری کرلے ،پاکستانی میزائلوں سے بچ نہیں سکتا: روسی جوہری ماہر

بھارت ایٹمی ہتھیاروں پر جتنی بھی سرمایہ کاری کرلے ،پاکستانی میزائلوں سے بچ نہیں سکتا: روسی جوہری ماہر

اسلام آباد (آن لائن) روس سے تعلق رکھنے والے ایک جوہری ماہر کا کہنا ہے کہ اینٹی بیلسٹک میزائل سسٹم بنانے کے لیے بھاری سرمایہ کاری کے باوجود بھارت، پاکستانی میزائل سے بچنے کے لیے مکمل طور پر اپنا دفاع کرنے کے قابل نہیں ہو سکتا۔

کارنیگی ماسکو سینٹر کے جوہری عدم پھیلاﺅپروگرام کے سینئر محقق پیٹر ٹوپیچکانو نے کہا کہ جوہری ہتھیاروں اور صلاحیتیں بڑھانے کے لیے اگر بھارت آئندہ 10 سال تک بھی بھاری سرمایہ کاری کرتا رہے تب بھی یہ کہنا مشکل ہے کہ وہ کسی تنازع کی صورت میں پاکستان کے ممکنہ حملے سے خود کو محفوظ رکھ پائے گا۔ جوہری معاملات میں مہارت رکھنے والے تھنک ٹینک ’سٹرٹیجک وڑن انسٹیٹیوٹ‘ (ایس آئی وی) کی، جنوبی ایشیا میں جوہری عدم پھیلاﺅاور سٹرٹیجک استحکام کے حوالے سے ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے پیٹر ٹوپیچکانو نے کہا کہ بیلسٹک میزائل ڈیفنس سسٹم بنانے کے لیے بھارت اور اسرائیل کے درمیان بڑے پیمانے پر تعاون اور روس سے ’ایس 400‘ ڈیفنس سسٹم حاصل کرنے کی کوششوں کے باوجود بھارت ایسا کوئی بھی سسٹم بنانے سے کوسوں دور ہے جس کی مدد سے وہ پاکستانی میزائل کا موثر طریقے سے دفاع کر سکے۔

بھارت کے نیوکلیئر سپلائرز گروپ (این ایس جی) کا رکن بننے کے حوالے سے پیٹر ٹوپیچکانو کا کہنا تھا کہ اس کے بعد دنیا کو بھارت کے حوالے سے محتاط ہونا ہوگا، بھارت کو دی جانے والی جوہری چھوٹ عالمی برادری کے لیے سبق کا ایک اہم حصہ ہے، کیونکہ بھارت نے اس کے بدلے میں کچھ خاص نہیں کیا اور نہ ہی اپنی پالیسیاں اور نقطہ نظر بدلا۔ اگرچہ پاکستان بھی یہ کہتا رہا ہے کہ وہ بھی نیوکلیئر سپلائرز گروپ کا رکن بننے کا اہل ہے لیکن امریکہ اپنے تحفظات کے باعث، پاکستان کو گروپ میں شامل کرنے کا حامی نظر نہیں آتا۔ پیٹر ٹوپیچکانو نے مزید کہا کہ بھارت سے دیرینہ سٹرٹیجک شراکت داری کے باوجود روس، پاکستان اور بھارت دونوں سے تعلقات میں فروغ چاہتا ہے۔

Comments are closed.

Scroll To Top