Home / Uncategorized / جماعت اہلسنت اور سنی اتحاد کونسل کے سومفتیان نے رمضان نشریات کیخلاف اجتماعی فتویٰ جاری کر دیا
جماعت اہلسنت اور سنی اتحاد کونسل کے سومفتیان نے رمضان نشریات کیخلاف اجتماعی فتویٰ جاری کر دیا

جماعت اہلسنت اور سنی اتحاد کونسل کے سومفتیان نے رمضان نشریات کیخلاف اجتماعی فتویٰ جاری کر دیا

لاہور، فیصل آباد(خبر نگار خصوصی، بیورورپورٹ) جماعت اہلسنّت پاکستان کے مرکزی امیر صاحبزادہ سید مظہر سعید کاظمی، جماعت اہلسنّت پاکستان کے مرکزی ناظم اعلی علامہ سید ریاض حسین شاہ اور سنی اتحاد کونسل پاکستان کے چیئرمین صاحبزادہ حامد رضا کی اپیل پر جماعت اہلسنّت اور سنی اتحاد کونسل کے ایک سو مفتیان کرام نے رمضان نشریات کے نام پر ہونی والی خرافات کے خلاف اجتماعی فتوی جاری کردیاہے۔ فتوی میں کہا گیا ہے کہ رمضان نشریات کے پروگراموں کا اکثر حصہ خلا ف شریعت امور پر مشتمل ہوتا ہے۔ اورایسے پروگراموں کو دیکھنا حرام ہے ۔غیر عالم اور غیرمستند نااہل افراد کااہم دینی و فقہی موضوعات پر گفتگو کرنا حرام ہے۔ رمضان نشریات کے نام پرہونیوالے دینی پروگراموں کی میزبانی نیم عریاں لباس پہننے والی اداکاراؤں سے کروانا حرام ہے۔ ٹی وی چینلز پر ہونے والے مخلوط دینی پروگراموں کوحج اور طواف کے اجتماعات سے تشبیہ دینا اسلام کا مذاق اڑانے کے مترادف،دین کی توہین اور کفر ہے ۔ رمضان نشریات کے پروگراموں میں شرعی تقاضوں کو قصداً نظر انداز کیا جا رہا ہے اور دینی شعائر کا مذاق اڑایا جا رہاہے اور یہ سب کچھ دین اور علماء کو آ ڑ بنا کر کیا جا رہاہے اس لئے عوام الناس اور بالخصوص علماء کی ایسے پروگراموں میں شرکت شرعاً سخت ناپسند یدہ ہے اور علما ء کوایسے پروگراموں میں جانے سے اجتناب کرنا چاہیے ۔ علماء اور عوام ایسے مخرب اخلاق پروگراموں کامکمل بائیکاٹ کریں کیونکہ ایسے پروگرام رمضان کے تقدس کی پامالی اور اسلام کی بدنامی کا باعث بن رہے ہیں ۔ سحری اور افطار کی ٹرانسمیشن میں ہونے والے پروگراموں میں عموماً نہ صرف باجماعت نماز ترک ہوتی ہے بلکہ اکثر دیکھنے میں یہ آیا ہے کہ نماز اداہی نہیں کی جاتی۔ نماز جیسے اہم فرض کا ترک گناہ کبیرہ اور سخت حرام ہے ۔ رمضان نشریات کے نام پر ہونے والے پروگراموں میں انعامات کی تقسیم اور معمولی چیزوں کے حصول کے لئے لوگوں کا طرز عمل ظاہر کرتا ہے کہ یہ قوم بھکاری ہے ۔ جس سے پوری قوم کا تمسخر اڑایا جارہا ہے اور یہ قوم کے تشخص کو مجروح کرنے کے مترادف ہے اور مجموعی طور پر قوم کی توہین ہے۔رمضان نشریات کے نام پر ہونے والے پروگراموں میں اکثر نئی نسل سے اخلاق باختہ حرکات کروانا اخلاقی اقدار کو مٹانے اور مسخرہ پن پھیلانے اور نوجوان نسل کو تباہ کرنے کے مترادف ہے۔

 

Comments are closed.

Scroll To Top