Home / Uncategorized / ”خدا کرے میری ارض پاک پر اترے،وہ فصل گل جسے اندیشہ زوال نہ ہو“:آرمی چیف
”خدا کرے میری ارض پاک پر اترے،وہ فصل گل جسے اندیشہ زوال نہ ہو“:آرمی چیف

”خدا کرے میری ارض پاک پر اترے،وہ فصل گل جسے اندیشہ زوال نہ ہو“:آرمی چیف

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک )صدر مملکت ممنون حسین کے پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس سے خطاب کے موقع پر آرمی چیف جنرل راحیل شریف و دیگر عسکری سربراہان بھی شریک ہوئے۔
نجی ٹی وی کے مطابق صدر کے خطاب کے بعد آرمی چیف نے صحافیوں سے گفتگو کے دوران نہ صرف ملکی و عالمی اہم امور پر گفتگو کی بلکہ انہوں نے ملک کی محبت سے لبریز ایسے کلمات بھی ادا کئے جنہیں سن کر ان کی وطن سے محبت پر بے اختیار پیار آگیا۔
آرمی چیف نے آئی ڈی پیز ،ڈرون حملہ،اقتصادی راہداری اور ضرب عضب پر تفصیلی بات چیت کی ۔اس دوران انہوں نے احمد ندیم قاسمی کے ملی نغمے کا شعر بھی پڑھا کہ :

خدا کر ے میری ارض پاک پر اترے
وہ فصل گل جسے اندیشہ زوال نہ ہو

آرمی چیفکی وطن سے محبت کے اس اظہار نے شرکا کے دلوں کو کو وطن کی محبت سے گرمادیا۔

احمد ندیم قاسمی کا مکمل ملی نغمہ کچھ اس طرح ہے۔

خدا کرے میری ارض پاک پر اترے
وہ فصلِ گل جسے اندیشہ زوال نہ ہو

یہاں جو پھول کھلے وہ کھلا رہے برسوں
یہاں خزاں کو گزرنے کی بھی مجال نہ ہو

یہاں جو سبزہ اگے وہ ہمیشہ سبز رہے
اور ایسا سبز کہ جس کی کوئی مثال نہ ہو

گھنی گھٹائیں یہاں ایسی بارشیں برسائیں
کہ پتھروں کو بھی روئیدگی محال نہ ہو

خدا کرے نہ کبھی خم سرِ وقارِ وطن
اور اس کے حسن کو تشویش ماہ و سال نہ ہو

ہر ایک خود ہو تہذیب و فن کا اوجِ کمال
کوئی ملول نہ ہو کوئی خستہ حال نہ ہو

خدا کرے کہ میرے ایک بھی ہم وطن کیلئے
حیات جرم نہ ہو زندگی وبال نہ ہو

(احمد ندیم قاسمی )

Comments are closed.

Scroll To Top