Home / Uncategorized / سعودی عرب میں غیر ملکیوں کیلئے ’گرین کارڈ‘، تفصیلات سامنے آگئیں
سعودی عرب میں غیر ملکیوں کیلئے ’گرین کارڈ‘، تفصیلات سامنے آگئیں

سعودی عرب میں غیر ملکیوں کیلئے ’گرین کارڈ‘، تفصیلات سامنے آگئیں

ریاض(مانیٹرنگ ڈیسک) سعودی عرب میں مقیم تارکین وطن کے لیے بڑی خوشخبری ہے کہ سعودی حکومت نے امریکہ کی طرز پر غیرملکیوں کو مستقل سکونت دینے کا فیصلہ کر لیا ہے۔ حکومت کی طرف سے غیرملکیوں کو مستقل رہائش کے کارڈ یا گرین کارڈ جاری کیے جائیں گے۔ تارکین وطن کی طرف سے سعودی حکومت کے اس فیصلے کو سراہا جا رہا ہے۔ اس فیصلے کا اعلان ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان نے بلومبرگ کو انٹرویو دیتے ہوئے کیا۔ شہزادہ محمد بن سلمان کا کہنا تھا کہ ”تارکین وطن کو مستقل سکونت کے کارڈز امریکہ کے گرین کارڈ سسٹم کی طرز پرجاری کیے جائیں گے، جس سے فیس کے عوض مزید غیرملکی ورکرز کو بھرتی کرنے میں مدد ملے گی۔ اس منصوبے سے موجود سپانسرشپ سسٹم کا خاتمہ ممکن ہو سکے گاکیونکہ جس غیرملکی کے پاس یہ کارڈ ہو گا اسے سعودی عرب میں روزگار کے حصول کے لیے کسی سپانسرشپ سرٹیفکیٹ کی ضرورت نہیں ہوگی۔ “
عرب نیوز کی رپورٹ کے مطابق شہزادہ محمد بن سلمان کا مزید کہنا تھا کہ ”اس کارڈ کے حامل افراد کو زکوٰة اور ویلیوایڈڈ ٹیکس ادا کرنا ہو گا اور انشورنس کے پریمیئم وغیرہ جیسے واجبات ادا کرنے ہوں گے۔یہ لوگ سعودی عرب میں اپنی نام پر جائیداد خرید سکیں گے اور کاروباری و صنعتی سرگرمیاں اختیار کر سکیں گے۔“بھارتی بزنس ڈیویلپمنٹ ایگزیکٹو عامر قیوم کا کہنا تھا کہ ”جو غیرملکی 40سال سے سعودی عرب میں مقیم ہیں ان کے لیے یہ بہت بڑی خبر ہے۔ میں یہاں ایک تجویز دینا چاہوں گا کہ ایسے غیرملکی افراد کو شہریت دی جانی چاہیے جن کا کم از کم ایک بچہ سعودی فوج میں کسی بھی عہدے پر فرائض سرانجام دینے کا خواہش مند ہو۔“ آرگنائزیشن او ایف ڈبلیو فورسز ورلڈ وائیڈ کے کنوینئر جان مونٹیرونا (John Monterona) کا کہنا تھا کہ ” دراصل سعودی حکومت نے شہریت کے عالمی انسانی حق کو تسلیم کر لیا ہے۔ ہمیں خوشی ہے کہ سعودی حکومت مستحق تارکین وطن کو ان کا یہ حق دینے جا رہی ہے۔“

Comments are closed.

Scroll To Top