Home / Uncategorized / عزیر بلوچ کا ایرانی انٹیلی جنس ایجنسی کو حساس معلومات فراہم کرنے کا انکشاف

عزیر بلوچ کا ایرانی انٹیلی جنس ایجنسی کو حساس معلومات فراہم کرنے کا انکشاف

13084277_1687535951501101_1521692329_n

کراچی (مانیٹرنگ ڈیسک)عزیز بلوچ سے تفتیش کی مشترکہ تحقیقاتی رپورٹ منظر عام پر آ گئی ہے جس میں لیاری گینگ وار کے سرغنہ نے 198قتل اور ایرانی خفیہ ایجنسی کو حساس معلومات فراہم کرنے کا اعتراف کیاہے ۔
نجی ٹی وی چینل دنیا نیوز کے مطابق لیاری گینگ وار کے سرغنہ عزیر بلوچ سے جے آئی ٹی نے تفتیش مکمل کر لی ہے ،تحقیقاتی رپورٹ میں کہا گیاہے کہ عزیر بلوچ 2013میں ایران کے راستے دبئی فرار ہو اوروہاں جانے کے بعد بھی بھتے کا دھندہ چلتا رہا ،عزیر بلوچ نے جعلی برتھ سرٹیفکیٹ ،ایرانی شناختی کارڈ اور پاسپورٹ بھی بنوا رکھاہے ۔عزیر بلوچ نے اعتراف کیا کہ حاجی نثار نامی شخص کے ذریعے اس کی ملاقات ایرانی انٹیلی جنس ایجنسی سے ہوئی اور اس نے ایرانی خفیہ ایجنسی کو حساس معلومات بھی فراہم کیں ۔
جے آئی ٹی رپورٹ کے مطابق عزیر بلوچ نے بیوی کے نام پر دس اکاو¿نٹس کھول رکھے تھے جس میں18کروڑ روپے موجود ہیں۔عزیر بلوچ نے 2005 میں 2 رینجرز اہلکاروں کے قتل کا بھی اعتراف کیا ہے۔لیاری گینگ وار کے سرغنہ نے اعتراف کیا کہ ملا نثار، استاد تاجو، سہیل ڈاڈا، شاہد بکک، سلیم ،ریحان، احسان اور الیاس اور عارف اسلحہ کی ڈیلنگ کرتے تھے،گینگ کے 14 کمانڈر بیرون ملک فرار ہیں، گینگ کے کارندے ساﺅتھ افریقہ، دبئی، اومان اور ایران میں موجود ہیں۔ ایس پی اقبال بھٹی کو ٹی پی او لیاری تعینات کرایا اور 7 ایس ایچ اوز سمیت 8 پولیس اہلکار لیاری میں اس کے لیے کام کرتے تھے۔ سابق ایڈمنسٹر لیاری محمد رئیس 2 لاکھ روپے ماہوار فراہم کرتا تھا۔ سابق چیرمین ایف سی ایس سعید خان 20 لاکھ روپے بھتہ دیتا تھا۔

Comments are closed.

Scroll To Top