Home / Uncategorized / والدین کے پاس نہ بھیجو ، مجھے قتل کردیں گے: زینت کی شوہر کو دہائی
والدین کے پاس نہ بھیجو ، مجھے قتل کردیں گے: زینت کی شوہر کو دہائی

والدین کے پاس نہ بھیجو ، مجھے قتل کردیں گے: زینت کی شوہر کو دہائی

لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک) والٹن روڈ پرزندہ جلائی جانے والی زینت اپنے شوہر سے کہتی رہی کہ مجھے میرے والدین کے پاس نہ بھیجو کیونکہ وہ مجھے قتل کردیں گے لیکن قسمت اسے اپنے والدین کے گھر گھسیٹ ہی لائی۔
میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مقتولہ زینت کے شوہر حسن نے بتایا کہ زینت سے سکول دور سے دوستی تھی اور ہم دونوں ہی شادی کرنا چاہتے تھے لیکن لڑکی کے گھر والے شادی کے خلاف تھے۔ میں نے زینت کیلئے رشتہ بھی بھجوایا مگر انکار کردیا گیا جس کے بعد ہم نے 29 مئی کو کورٹ میرج کی ۔

مقتولہ کے شوہر حسن نے بتایا کہ ہمارے شادی کرنے کے بعد زینت کی والدہ اسے اپنے گھر لے گئی اور کہا کہ آٹھ دن کے اندر باعزت طریقے سے رخصتی کردی جائے گی ، زینت نے جانے سے انکار کردیا تھامگر اس کے چچا کے گارنٹی دینے پر میں نے بھجوادیا۔ حسن نے بتایا کہ دو دن تک زینت سے رابطہ رہا اور اس دوران وہ کہتی رہی کہ اس کے گھر والے اسے قتل کردیں گے لیکن میں اسے تسلی دیتا رہا ۔ زینت نے فون پر بتایا کہ اس کے گھر والے اسے واپس نہیں آنے دیں گے لیکن میں نے کہا کہ اب معاملہ بڑوں کے بیچ میں آگیا ہے لہٰذا ہم کچھ نہیں کرسکتے ۔
واضح رہے کہ لاہور کے علاقے فیکٹری ایریا میں والٹن روڈ پر پسند کی شادی کرنے پر والدہ پروین بی بی نے اپنی بیٹی زینت کو بدھ کی صبح زندہ جلا کر قتل کردیا تھا۔

زیر نظر تصویر میں جلائی گئی زینت کا شوہر حسن میڈیا کو تفصیلات بتارہا ہے

Comments are closed.

Scroll To Top