Home / Uncategorized / وہ یورپی حکمران جس کی حکومت قائم کرنے کیلئے معمر قذافی نے اربوں روپے لٹادئیے اور یہ بات چھپانے کیلئے مغربی ممالک ان پر چڑھ دوڑے، یہ حکمران کون ہے؟ جان کر آپ کی حیرت کی بھی انتہا نہ رہے گی
وہ یورپی حکمران جس کی حکومت قائم کرنے کیلئے معمر قذافی نے اربوں روپے لٹادئیے اور یہ بات چھپانے کیلئے مغربی ممالک ان پر چڑھ دوڑے، یہ حکمران کون ہے؟ جان کر آپ کی حیرت کی بھی انتہا نہ رہے گی

وہ یورپی حکمران جس کی حکومت قائم کرنے کیلئے معمر قذافی نے اربوں روپے لٹادئیے اور یہ بات چھپانے کیلئے مغربی ممالک ان پر چڑھ دوڑے، یہ حکمران کون ہے؟ جان کر آپ کی حیرت کی بھی انتہا نہ رہے گی

پیرس(مانیٹرنگ ڈیسک) برطانیہ و دیگر ممالک نے لیبیا پر جنگ مسلط کرکے اور شدت پسندوں کی حمایت کرکے آنجہانی جنرل قذافی کو قتل کروایا اور آج تک لیبیا کو تہس نہس کرنے والے غاصب مغربی ممالک یہ کہتے آئے ہیں کہ انہوں نے خالصتاً انسانی بنیادوں پر لیبیا پر جنگ مسلط کی مگر اب اس کے برعکس انکشاف سامنے آ گیا ہے جس کے مطابق سابق فرانسیسی صدر نکولس سرکوزی نے الیکشن جیتنے کے لیے جنرل قذافی سے 4کروڑ 20لاکھ پاﺅنڈ (تقریباً 6ارب 38کروڑ53لاکھ روپے) لیے تھے، اور وہ اس رازکے فاش ہونے سے خوفزدہ تھے۔ اس حوالے سے منظرعام پر آنے والی ایک دستاویز کے اصلی یا نقلی ہونے کا مقدمہ فرانسیسی عدالت میں چل رہا تھا جس نے گزشتہ روز فیصلہ سناتے ہوئے اس دستاویز کو اصلی قرار دے دیا ہے۔ برطانوی اخبار ڈیلی میل کی رپورٹ کے مطابق عدالت کے فیصلے سے اس دعوے کو تقویت ملی ہے کہ نکولس سرکوزی نے الیکشن جیتنے کے لیے جنرل قذافی سے رقم لی مگر اقتدار میں آنے کے بعد انہیں یہ راز فاش ہونے اور اقتدار سے ہاتھ دھو بیٹھنے کاخدشہ لاحق ہو گیاتھا، لہٰذا وہ جنرل قذافی کو قتل کروانا چاہتے تھے اور اس مقصد کے لیے انہوں نے دیگر مغربی ممالک کے ساتھ مل کر2011ءمیں ”عرب بہار“ کا فائدہ اٹھاتے ہوئے لیبیا پر جنگ مسلط کر دی اور وہاں باغیوں کو ہر طرح کی مدد فراہم کرکے جنرل قذافی کی حکومت کا خاتمہ کیا اور بعدازاں انہیں بھی قتل کروا دیا۔

نکولس سرکوزی کے اس خوف کی وجہ یہ تھی کہ فرانسیسی قوانین کے مطابق کوئی بھی صدارتی امیدوار 6ہزار300پاﺅنڈ(تقریباً ساڑھے 9لاکھ روپے)سے زائد رقم نہیں لے سکتا۔ اگر کسی پر اس سے زیادہ رقم لینے کا الزام ثابت ہو جائے تو اسے حکومت سے ہاتھ دھونا پڑتے ہیں۔ اس پر مستزاد یہ کہ نکولس سرکوزی نے جنرل قذافی سے یہ رقم پاناما اور سوئٹزرلینڈ کے بینکوں کے ذریعے منی لانڈرنگ کے ذریعے حاصل کی تھی۔ رپورٹ کے مطابق درست قرار دی گئی دستاویز میں تحریر ہے کہ جنرل قذافی اور نکولس سرکوزی کے مابین ایک غیرقانونی مالی معاہدہ ہوا تھا جس نے سرکوزی کو 2007ءکے انتخابات جیتنے میں مدد دی۔ یہ معاہدہ عربی زبان میں تحریر کیا گیا ہے اور اس پر جنرل قذافی کے انٹیلی جنس چیف موسیٰ کوسا (Mussa Kussa)کے دستخط موجود ہیں۔جنرل قذافی نے یہ رقم سرکوزی کو اپنی الیکشن مہم چلانے کے لیے دی تھی۔ڈیلی میل کے مطابق سرکوزی کے وکلاءنے عدالت کے اس دستاویز کو درست قرار دینے کے فیصلے پر ردعمل دینے سے انکار کر دیا ہے حالانکہ اس سے قبل وہ اس کے غلط ہونے کے دعوے کرتے آئے ہیں۔ واضح رہے کہ اس معاہدے کے علاوہ بھی نکولس سرکوزی پر کرپشن کے کئی مقدمات چل رہے ہیں۔

Comments are closed.

Scroll To Top