Home / Uncategorized / ”ڈاکٹر روتھ کو مدر ٹریسا سے نہ ملائیں‘

”ڈاکٹر روتھ کو مدر ٹریسا سے نہ ملائیں‘

سوشلستان میں سابق وزیراعظم کا لاہور کی جانب سفر حاوی ہے اور اس پر روزانہ نت نئے ٹرینڈز سامنے آتے ہیں۔ ان ٹرینڈز اور اس سفر کا میابی یا ناکامی کا فیصلہ اس بات پر منحصر ہے کہ آپ کون سا چینل دیکھ رہے ہیں اور کس سیاسی جماعت کی حمایت کرتے ہیں۔ مگر اس ہفتے کے سوشلستان میں ہم بات کریں گے پاکستان میں کوڑھ کے موذی مرض میں مبتلا مریضوں کی مسیحا ڈاکٹر روتھ فاؤ کے بارے میں جن کا گذشتہ روز انتقال ہو گیا۔

پاکستان میں کوڑھ کے مریضوں کی مسیحا

ڈاکٹر روتھ فاؤ کے اس دنیا سے جانے کی خبر پر پاکستان کے مختلف سیاسی اور سماجی حلقوں کی جانب سے دکھ اور افسوس کا اظہار کیا گیا۔

سوشل میڈیا پر سیاسی ٹرینڈز بنانے والے مشینوں کے ٹرینڈز کے باوجود ڈاکٹر روتھ فاؤ کا نام صفِ اول کا ٹرینڈ رہا۔

جہاں لوگ انھیں کوڑھ کے مریضوں کی مسیحا کہتے رہے وہیں بہت سوں نے انھیں پاکستان کی مدر ٹریسا قرار دیا۔

ان کے مرنے کے فوراً بعد سوشل میڈیا پر ان کی سرکاری اعزاز کے ساتھ تدفین کا مطالبہ شروع ہوا جس کے چند گھنٹوں بعد حکومت کی جانب سے سرکاری تدفین کا اعلان کیا گیا۔

اور اس اہم موقع پر سوشل میڈیا کے بعض اکاؤنٹس کو اعتراض تھا کہ انھیں مدر ٹریسا کیوں قرار دیا جا رہا ہے۔

Comments are closed.

Scroll To Top