Home / Uncategorized / ہم جنس پرستوں کے نائٹ کلب میں فائرنگ کے دوران مرنے والے بیٹے کی اپنی ماں کے ساتھ دلخراش گفتگو منظر عام پر آگئی
ہم جنس پرستوں کے نائٹ کلب میں فائرنگ کے دوران مرنے والے بیٹے کی اپنی ماں کے ساتھ دلخراش گفتگو منظر عام پر آگئی

ہم جنس پرستوں کے نائٹ کلب میں فائرنگ کے دوران مرنے والے بیٹے کی اپنی ماں کے ساتھ دلخراش گفتگو منظر عام پر آگئی

اورلینڈو (مانیٹرنگ ڈیسک) اورلینڈو کے نائٹ کلب میں فائرنگ کے واقعے کے دوران کلب میں موجود بیٹے کی اپنی ماں سے رونگٹے کھڑے کردینے والی آخری گفتگو منظر عام پر آگئی ہے جس کے بعد ہر کوئی افسردہ ہوگیا۔
امریکی شہر اورلینڈو میں ہم جنس پرستوں کے ایک نائٹ کلب میں افغان نژاد امریکی شہری عمر متین نے فائرنگ کرکے 50 افراد کو قتل اور 53 افراد کو زخمی کردیا تھا جبکہ پولیس سے فائرنگ کے تبادلے میں حملہ آور خود بھی مارا گیا۔ حملہ کے دوران نائٹ کلب میں موجود ایڈی جسٹس نامی نوجوان نے اپنی ماں کو میسج کیا جس میں بتایا کہ وہ کلب کے دیگر ممبران کے ہمراہ باتھ روم میں ہے اور مارا جائے گا۔


ایڈی جسٹس نے ماں کو کہا کہ وہ اس سے بہت پیار کرتا ہے ۔ اس نے اپنی ماں سے کہا کہ جلدی سے پولیس کو بلاؤجس پر کلب کے باہر موجود ایڈی کی والدہ مینا جسٹس نے اپنے بیٹے سے پوچھا کہ کہ تم کہاں ہو، مجھے جگہ بتاؤمیں آتی ہوں؟، جس پر ایڈی نے آخری میسج کیا جس میں بتایا کہ وہ (حملہ آور) آگیا ہے، اس نے ہماری آواز سن لی ہے ۔ اس آخری میسج کے بعد ایڈی جسٹس بھی اپنے دیگر ساتھیوں کے ہمراہ عمر متین کا شکار بن گیا ۔

Comments are closed.

Scroll To Top