Home / Uncategorized / آواران سے اوکاڑہ
آواران سے اوکاڑہ

آواران سے اوکاڑہ

گاؤں سے آ کر شہروں میں بس جانے والوں کی ایک بیماری کبھی نہیں جاتی۔ جیسے ہی عید آتی ہے گاؤں بھاگ جاتے ہیں۔ چند سال پہلے عید پر گاؤں نہیں جا سکا۔ کراچی کے ایک صحافی دوست نے قائل کر لیا کہ چلو اوکاڑہ نہیں جا رہے تو عید آواران میں مناتے ہیں۔

Comments are closed.

Scroll To Top