Error. Page cannot be displayed. Please contact your service provider for more details. (12)

Home / Uncategorized / توہین مذہب کاقانون ،چار مسلمان سکھ نوجوان کی تربان کی بے حرمتی کے الزام میں گرفتار
توہین مذہب کاقانون ،چار مسلمان سکھ نوجوان کی تربان کی بے حرمتی کے الزام میں گرفتار

توہین مذہب کاقانون ،چار مسلمان سکھ نوجوان کی تربان کی بے حرمتی کے الزام میں گرفتار

13152856_1688824414705588_1784434415_n

ساہیوال(مانیٹرنگ ڈیسک)چیچہ وطنی میں توہین مذہب کے قانون کے تحت چار مسلمانوں کو سکھ نوجوان کی مذہبی نشانی تربان(پگڑی)  کی بے حرمتی کرنے کے الزام میں گرفتار کر لیا گیا جبکہ چھ افراد کیخلاف مقدمہ درج ہے  ۔ ڈیلی پاکستان گلوبل کے مطابق ملزمان مقامی ٹرانسپورٹ کمپنی کے ملازم ہیں انہوں نے مبینہ طور پر  دوران سفر سکھ نوجوان  کی تربان   کی بے حرمتی کی ۔ پاکستان کی تاریخ میں ایسا پہلی بار ہوا ہے کہ کسی دوسرے مذہب کی مبینہ بے حرمتی پر مسلمانوں کیخلاف توہین مذہب کا قانون حرکت میں آیا ہو ۔

صبر ہی کریں: وزیراعظم
ایس ایچ او خضرحیات نے ڈیلی پاکستان گلوبل کو بتایا کہ ”پولیس باقر علی ، فیض عالم ، شکیل اور سناول کو گرفتار کر چکی ہے ،بس ٹرمینل منیجر ریاست علی کو بھی جلد حراست میں لے لیا جائے گا “۔
ملتان کا رہائشی 29سالہ مہندر پال سنگھ کو مبینہ طور پر نجی بس کمپنی کے ملازمین کی جانب سے ملتان کی جانب سفر کے دوران ڈجکوٹ کے قریب اس وقت ہتک آمیز رویے کا سامنا کرنا پڑا جب انہوں نے دیگر مسافروں کے ہمراہ خرابی کی وجہ سے بس آہستہ چلانے پر اڈے پر انتظامیہ سے شکایت کی اور اس دوران لڑائی ہو گئی ، بس کے چار ملازمین میں سے ایک نے سکھ نوجوان کی تربان(روایتی مذہبی پگڑی) کو بھی نیچے گرا دیا ۔مہندر پال سنگھ نے پولیس کو درج کرائی گئی شکایت میں بتایا کہ تربان سکھ مذہب میں مقدس گردانی جاتی ہے اور یہ سکھ مذہب کی پانچ بنیادی تعلیمات میں سے ایک ہے ، لہذا ٹربان کو نیچے گرانا سکھ مذہب کی توہین ہے ۔پاکستان پینل کوڈ کی سیکشن 295، 148اور 506کے تحت ایف آئی آردرج کی جا چکی ہے جبکہ ملزمان کو منگل کو عدالت میں پیش کیاجائے گا ۔

Comments are closed.

Scroll To Top